دل وجان سے کام کیا مگر آج دل گرفتہ ہوں،سعد رفیق کی عدالت میں پیشی کے بعد میڈیا سے گفتگو


Mian Fayyaz Ahmed Posted on April 15, 2018

وزیر ریلوے سعد رفیق کو ریلوے کے محکمے میں مبینہ خرد برد لے الزام میں سپریم کورٹ میں بلایا گیا سعد رفیق کا دوران سماعت کہنا تھا کہ چیف جسٹس صاحب آپ نے مجھے یاد کیا،یاد نہیں کیا بلکہ سمن جاری کیا ہے ۔

چیف جسٹس کا جواب میں کہنا تھا کہ روسٹرم پر آئیں آور لوہے کے چنے بھی ساتھ لے آئیں،وہ بیان سیاسی مخالفین کے لیے تھا نہیں سننا تو میں چلا جاتا ہوں جس پر چیف جسٹس نے کہا کہ چلے جائیں ہم توہین عدالت کا نوٹس دے دیں گے ۔

سعد رفیق نے یاد دلایا کہ میں نے عدلیہ کے لیے جیل کاٹی تھی جس پر چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ آپ کو دوبارہ بھی جیل ہو سکتی ہے،پہلی با رقانون کی بالادستی قائم ہورہی ہے جس پر تکلیف ہے ،سپریم کورٹ نے ریلوے کے محکمے کا آڈٹ کرانے کا حکم بھی دیدیا ہے۔